سپریم کورٹ کے فیصلہ نے حکمرانوں کی گردن جھکادی ہے،حافظ حسین احمد

کوئٹہ:جمعیت علمائے اسلام کے مرکزی ترجمان اور دینی جماعتوں کے رابطہ کمیٹی کے سربراہ حافظ حسین احمد نے کہا ہے کہ اب تو سپریم کورٹ کے فیصلہ نے بظاہر وفاق اور خصوصاً سندھ کے مطلق العنان حکمرانوں کی گردن جھکادی ہے۔ وہ منگل کو اپنی رہا ئشگاہ جامع مطلع العلوم میں ایک نجی چینل سے گفتگوکررہے تھے۔انہوں نے کہاکہ سندھ کے حکمرانوں کے گردن کا سریہ تو یوم سیدنا حضرت علی کرم اللہ وجہہ کے موقع پر نہ صرف نکال باہر کیاگیابلکہ اہل تشیع نے اپنے اتحاد ویکجہتی کے باعث96 فیصد سنیوں اور تاجروں کے لیے بھی راستہ ہموار کیاجبکہ حکومت سے مذاکرات کرنے والے حضرت مفتی تقی عثمانی، حضرت مفتی منیب الرحمن اورحضرت قاری محمد حنیف جالندھری اوردیگر اکابرین حکومت کے ساتھ تعاون میں سنجیدہ اور مخلص تھے مگر طے شدہ امور کے حوالے سے سندھ کی حکومت نے ان کے ساتھ بھرپور ”ہاتھ“کیاکیونکہ ان بزرگوں کو شایدیہ علم نہ تھا کہ وزیراعلی مراد علی شاہ اور ناصر حسین شاہ سمیت حکومت کے کئی عہدیدار کس مسلک کے کٹر پیروکار ہیں؟ اور ان کو سیاہ لباس زیب تن کئے عزاداری کے جلوسوں میں دیکھا گیا-دریں اثنا اس تازہ ترین صورتحال کے پیش نظر پارٹی قیادت نے پیغام جاری کیا ہے کہ عوام شب قدر، جمعتہ الوداع اورنماز عیدالفطر کے مواقع پر بھرپور طور پر شرکت کرنے اوراس ضمن میں کسی پابندی کوخاطرمیں نہ لائیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں