شمس ہسپتال شیوہ آڈہ میں غیر مستند ٹیکنیشن نے غلط ٹیسٹ سے نوجوان کو ایڈز کا مریض بنا دیا

رزڑ(صوابی ٹائمز نیوز) رزڑ شیوہ آڈہ میں نجی ہسپتال کی طرف سے غلط ٹیسٹ دینے پر نوجوان کو ذہنی اذیت میں مبتلا کر دیا نوجوان نے خون دیتے وقت اپنے ٹیسٹ کروائے تو ہسپتال والوں نے اُن کو ایڈز کا مریض قرار دیا اس پر اُس نے اسلام آباد کے الشفاء انٹرنیشنل ہسپتال میں ہزاروں روپے کے ٹیسٹ کر وائے تو پتہ چلا کہ نوجوان کو کوئی مرض لاحق نہیں ہے تفصیلات کے مطابق شیوہ آڈہ کے شمس ہسپتال عملہ کے ناقص کارکردگی کی وجہ سے نوجوان کو نہ صرف بے وجہ شرمندہ کیا گیا بلکہ اُن کے ہزاروں روپے خرچ کروانے کے ساتھ ساتھ ذہنی تکلیف میں مبتلا کر دیا .اس سلسلے میں نواں کلی کے رہائشی اویس نے صوابی ٹائمز کو بتایا کہ مذکورہ ہسپتال میں غیر مستند اور غیر تجربہ کار ڈاکٹر اور ٹیکنیشن پٹھائے گئے ہیں جس کی وجہ سے اُن کو اس وقت ذہنی اذیت اور شرمندگی کا سامنا کرنا پڑا جب وہ ایک مریض کو خون دینے گیا تھا تو ہسپتال والوں نے بے وجہ انہیں گناہگار قرار دیکر ایڈز کا مرض تشحیص کروایا جس سے اُن کو ذیہنی اذیت سے دوچار ہونا پڑااور جب انہوں نے اسلام اآباد میں اپنے ٹیسٹ کروائے تو پتہ چلا کہ اُں کو کوئی بیماری نہیں ہے اور ہسپتال کے رپورٹ غلط ہے .اس سلسلے میں وہ ہسپتال انتظامیہ کے خلاف قانونی چارہ جوئی کا حق محفوظ رکھتا ہے .

Advertisements
Sponsored by Wirasat Ishtihar
کیٹاگری میں : صحت

اپنا تبصرہ بھیجیں