جنگ 1965میں صوابی کے ہیروکمانڈر صوبیدار عالمزیب خان ستارہ جرات کو صوابی کے عوام سلام پیش کرتے ہیں

جنگ 1965میں صوابی کے ایک ہیروکمانڈر صوبیدار عالمزیب خان ستارہ جرات کی کہانی _

Advertisements

صوابی(صوابی ٹائمز نیوز)صوبیدار عالمزیب خان ٹینک کے سامنے لیٹ گئے اور اپنے سے باندھے ہوئے ایک بم سے ٹینک کو اڑا دیا اور جام شہادت نوش کی.6 ستمبر 1965 کے درمیانی شب جب ہمسایہ دشمن نے یہ کہہ کر حملہ کیا تھا کہ صبح کا ناشتہ لاہور میں کرینگے تب شائد انھیں اندازہ نہیں تھا کہ انکا واسطہ عالمزیب جسے جوانوں سے ہوگا _ اسی لئے تو پسپا ہو کہ واپس بھاگنا پڑا __جنگ کئی دن تک جاری رہی لیکن جب 8 ستمبر کو دشمن نے چونڈہ کے مقام پر قصور کی طرف سے حملہ کر دیا تو انکے پاس بھاری نفری اور 600 کے قریب ٹینک تھے _ مگر جب ہمت مرداں اور مدد خدا ہو تو عددی برتری کچھ معنی نہیں رکھتی _ صوبیدار عالمزیب اس محاذ پر اپنے کچھ دوستوں کے ساتھ اس محاذ پر سب سے آگے لڑ رہے تھے اور انکا مورچہ سب سے پہلے والے مورچوں میں تھا _ دشمن کی پیش قدمی جاری تھی لیکن اسلام کے سپاہی ان کے ہر حملے کا منه توڑ جواب دے رہے تھے _ جسکی وجہ سے دشمن کو پیش قدمی میں کافی دشواری پیش آ رہی تھی لیکن عددی شمار میں زیادہ ہونے کی وجہ سے آہستہ آھستہ آگے بڑھ رہے تھے _ یہ دیکھ کر صوبیدار عالمزیب سب سے پہلے مورچے نکل کر کلمہ شہادت پڑھتے ہوئے اور آگے بڑھتے ہوئے ایک ٹینک کے سامنے لیٹ گئے اور اپنے سے باندھے ہوئے ایک بم سے خود کو اڑا دیا اور جام شہادت نوش کی _ یہ دیکھ کر انکے 12 اور دوست مورچوں سے نکل کر خود شہادت کے لئے پیش کرتے رہے اور ایک ایک ٹینک کو اڑاتے رہے یہ دیکھ کر دشمن نے پیش قدمی روک دی اور پیچھے ہٹنے پر مجبور ہوئے __ انکو اس بہادری کے اعزاز میں بعد از شہادت کے ستارہ جرات سے نوازا گیا ___
صوبیدار عالمزیب خان صرف ایک بہادر سپاہی ہی نہیں ایک بہترین اتھلیٹھ بھی تھے اور دنیا کے دس سے زیادہ ممالک میں پاکستان کی نمائندگی کر چکے ہیں جب کہ سپورٹس میں انکا سب سے بڑا اعزاز ہلنسکی فن لینڈ میں منعقد ہونے والے اولمپکس میں پاکستان کے لئے جیتنے والا سب سے پہلا گولڈ مڈل تھا _صوبیدار عالمزیب زیب خان کا تعلق صوابی میں مانیری گاؤں سے تھا _ اور آج بھی اس گاؤں میں انکے کے بہادری کے قصے زبان زد عام ہیں

اپنا تبصرہ بھیجیں